وزیر اعظم عمران خان کی کوششیں رنگ لے آئیں ،مقدس ہستیوں کے احترام  اور اسلامو فوبیا کے خلاف پاکستان کی قرارداد اقوام متحدہ جنرل اسمبلی میں منظور۔

یورپی یونین اور دیگر مغربی ممالک اور ہندوستان کی مخالفت کے باوجود ، اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی نے پاکستان اور فلپائن کی جانب سے پیش کردہ بین المذہب مکالمے کے بارے میں قرارداد منظور کی جس میں “مقدس مذہبی ہستیوں کا احترام کرنے کی ضرورت پر زور دیا گیا ہے”۔

سرکاری نیوز ایجنسی اے پی پی مطابق اس قرار داد کے حق میں 90 ووٹ پڑے۔ کسی ملک نے اس کے خلاف ووٹ نہیں دیا جبکہ52 ممالک نہیں ووٹنگ میں حصہ نہیں لیا۔

گذشتہ ماہ پاکستان سمیت متعدد مسلم ممالک میں  فرانس کی جانب سے آخری نبی حضرت محمدﷺ کے شان میں گستاخانہ خاکے جاری کرنے پر شدید احتجاج ہوا تھا۔ اس واقعے کو ہوا تب ملی تھی جب ایک فرانسیسی استاد کو مسلمان طالب علم نے کلاس میں گستاخانہ خاکے دکھانے پر قتل کر دیا تھا۔ اس کے بعد فرانسیسی صدر میکرون کے اسلام مخالف بیانات نے جلتی پر تیل کا کام کیا۔

پاکستان نے حالیہ  گستاخانہ خاکوں کی شدید مذمت کی تھی اور فرانسیسی صدر کے توہین آمیز بیانات پر اپنا احتجاج ریکارڈ کرایا تھا۔

پاکستان نے سفارتی مشنز کے زریعے  یورپی ممالک کی مخالفت کے باوجود اس  قرارداد کو جنرل اسمبلی  سےمنظور کرانے کیلئے او آئی سی (اسلامی تعاون تنظیم) اور دیگر ترقی پذیر ممالک کو  کو قائل کیا۔

اقوام متحدہ میں پاکستان کے سفیر منیر اکرم نے اپنے بیان میں وزیر اعظم عمران خان کی طرف سے عالمی برادری اور اقوام متحدہ سے اسلامو فوبیا کا مقابلہ کرنے اور مذہبی  جذبات کے احترام کو فروغ دینے کے متعدد مطالبات کا حوالہ دیا۔

منیر اکرم نے  اس بات پر زور دیا کہ جان بوجھ کر” دنیا کے سب سے بڑے مذاہب میں سے ایک اسلام کے پیروکاروں کے جذبات کو منفی دقیانوسی تصورات کے زریعے بھڑکانا خطرناک عمل ہے۔ یہ خطرناک عمل ‘ تہذیبوں کے درمیان تصادم’ کے مترادف ہے اور فوری طور پر اس کا ازالہ کیا جانا چاہئے”۔

قرارداد میں زور دیا گیا ہے کہ آزادی اظہار رائے کے استعمال کے ساتھ کچھ فرائض اور ذمہ داریاں عائد ہوتی ہیں۔ لہذا آزادی اظہار کے نام پر کسی کی توہین کی اجازت نہیں دی جا سکتی۔

پاکستان کی پیش کردہ قرارداد میں مذہبی منافرت اور اس کی  کسی بھی طرح سے وکالت کی مذمت کی گئی ہے جو تشدد یا امتیازی سلوک کو اکسا رہی ہو۔  قرارداد میں دنیا میں معاشرتی ہم آہنگی ، امن و ترقی کو فروغ دینے کے لیے باہمی اور بین الثقافتی مکالمے کی اہمیت  پر  بھی زور دیا گیا ہے۔

وفاقی وزیر علی زیدی نے قرار داد کی منظوری پر اپنے ٹویٹ میں کہا کہ” اسلامو فوبیا کا مسئلہ اجاگر کرنے پر وزیراعظم عمران خان کی قیادت کو سلام۔ اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی نے حضرت محمدﷺ کی توہین اور مقدس ہستیوں کی توہین کے خلاف پاکستان کی قرارداد منظور کر لی ہے”

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *